Safar Main Aik Jag Tamam Ho Giya

سفر میں ایک جگ تمام ہو گیا

سفر میں ایک جگ تمام ہو گیا

اب اپنے گھر کا راستہ بھی کھو گیا

پھر اس کے پیرہن کی بو نہ مل سکی

وہ میرے خوں میں آستیں ڈبو گیا

وہ نیشتر جو اس کے ہاتھ میں نہ تھا

گیا تو میری سانس میں پرو گیا

اب آنسوؤں کی فصل کاٹتے رہو

جدائیوں کے بیج وہ تو بو گیا

نہ جانے کس نگر آج شام ہو

سحر ہوئی تو جی اداس ہو گیا

گزر گئی جو بے گھروں پہ کیا کہیں

زمیں کو ابر برشگال دھو گیا

مری تو آنکھ نم نہ ہو سکی مگر

وہ مجھ پہ میرے آنسوؤں سے رو گیا

لکھے گا کون اس صدی کی داستاں

ہر ایک پل ہزار سال ہو گیا

حسن عابدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(412) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hassan Abidi, Safar Main Aik Jag Tamam Ho Giya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hassan Abidi.