App Ke Dar Se Kidher Jayeen Ge

آپ کے در سے کدھر جائیں گے

آپ کے در سے کدھر جائیں گے

خاک ہو جائیں گے مر جائیں گے

مت نگاہوں سے گرانا ہم کو

ٹوٹ جائیں گے بکھر جائیں گے

یا پگھل جائیں گے گرمی سے آہ

یا تو سردی سے ٹھٹھر جائیں گے

موٹی موٹی سی دکھا کر آنکھیں

وہ سمجھتے ہیں کہ ڈر جائیں گے

عشق نے اور بگاڑا یارو

ورنہ سمجھے تھے سدھر جائیں گے

میرے اعضا کا کیا ہوگا اللہ

ان کے گیسو تو سنور جائیں گے

داغ دل کے دکھا تو دوں لیکن

دیکھ کر نازنیں ڈر جائیں گے

ہائے جنت میں کیا ہوگا اپنا

دل ہمارے وہاں بھر جائیں گے

گزری جب ہم پہ قیامت حاویؔ

خیر یہ دن بھی گزر جائیں گے

حاوی مومن آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(339) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Havi Momin Abadi, App Ke Dar Se Kidher Jayeen Ge in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Havi Momin Abadi.