Havi Nahi Afsoos K Mehfil Se Nikala

حاویؔ نہیں افسوس کہ محفل سے نکالا

حاویؔ نہیں افسوس کہ محفل سے نکالا

ظالم نے مگر آہ مجھے دل سے نکالا

ڈوبا تھا میں تو عین سمندر کے میانے

حیرت ہے کہ لاشہ مرا ساحل سے نکالا

کیا تیر چلایا ہے چمن میں ارے گلچیں

کل سانس جو اک طائر بسمل سے نکالا

مجنوں نے محبت میں ہتھیلی پہ دھرا سر

لیلیٰ نے فقط ہاتھ نہ محمل سے نکالا

اس کے تو میں اب وہم و گماں میں بھی نہیں ہوں

میں نے بھی مکمل اسے اس دل سے نکالا

حاوی مومن آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(324) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Havi Momin Abadi, Havi Nahi Afsoos K Mehfil Se Nikala in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Havi Momin Abadi.