Kin Khayaloon Main Tu Dilbar Para Hai

کن خیالوں میں تو دلبر پڑا ہے

کن خیالوں میں تو دلبر پڑا ہے

ایک سے ایک یہاں پر پڑا ہے

میں وہ درویش ہوں جس کا زمانے

سطح افلاک پہ بستر پڑا ہے

آسماں کی یہ بلندی نہیں کچھ

آسماں تو مرے سر پر پڑا ہے

ایک ناداں سے صنم کی گلی میں

ایک استاد ہنر ور پڑا ہے

میرؔ کہتے تھے جسے سنگ گراں

میرے دل پر وہی پتھر پڑا ہے

دھوپ میں خوار پھروں میں مرا دل

زلف کے سائے میں خوشتر پڑا ہے

میرے اشکوں میں مرے شعر ہیں تر

سارا خطہ زمیں کا تر پڑا ہے

یوں ہی حاویؔ میں اگلتا نہیں در

میرے قدموں میں سمندر پڑا ہے

حاوی مومن آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(359) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Havi Momin Abadi, Kin Khayaloon Main Tu Dilbar Para Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Havi Momin Abadi.