Tere Yeh Jan Nisar O Talabgar Dekh Kar

تیرے یہ جاں نثار و طلبگار دیکھ کر

تیرے یہ جاں نثار و طلبگار دیکھ کر

حیراں ہوں ایک انار سو بیمار دیکھ کر

گل پھول آب آب ہوئے کل چمن کے بیچ

گل کے ہمارے آتشیں رخسار دیکھ کر

سدرہ سرو صنوبر و طوبیٰ کھڑے کھڑے

سرگشتہ ہیں چمن میں قد یار دیکھ کر

پیروں میں دل زدوں کے نہ چبھ جائیں استخواں

اس راہ سے گزر ہو تو سرکار دیکھ کر

حسرت گلے سے اور لگانے کی بڑھ گئی

نازک سے ہاتھ میں ترے تلوار دیکھ کر

یا جسم و جاں میں آہ وہ طاقت نہیں رہی

یا ڈر گیا ہوں وقت کی رفتار دیکھ کر

عفریت خانہ سا ہوا جز گھر ترے پری

رہتا ہے ڈر سا اب در و دیوار دیکھ کر

حاویؔ ہماری جان میں کچھ جان آ گئی

مقتل میں اپنے خاص وفادار دیکھ کر

حاوی مومن آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(367) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Havi Momin Abadi, Tere Yeh Jan Nisar O Talabgar Dekh Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Havi Momin Abadi.