Mere Dunya K Sare Rang Mere Maan Se Zinda Hain

مری دنیا کے سارے رنگ میری ماں سے زندہ ہیں

مجھے سب یاد ہے اب بھی

میں جب چھوٹا سا بچہ تھا

کسی ضد پر جو اڑ جاتا

تو رونے بیٹھ جاتا تھا

میں جب روتے سسکتے ماں کے سینے سے چپک جاتا

تو سب کچھ بھول جاتا تھا

مجھے وہ یاد ہے اب تک

کبھی جو ہاتھ تھامے, راہ چلتے

گر بھی جاتا تو, اٹھا کر اپنی بانہوں میں

مجھے بس چوم لیتی ماں

یوں ننھی چوٹ بھر جاتی

میں پھر سے دوڑنے لگتا

میں کب سے موڑ پر بیٹھا اسی اک سوچ میں گم ہوں

کہ اب جب ماں کے چہرے پر

پڑی ہیں وقت کی جھریاں

میں اس کے کانپتے ہاتھوں کو لے کر اپنے ہاتھوں میں

وہیں قدموں میں رہ جاؤں

سبھی دکھ ماں سے کہہ جاؤں

مری دنیا کے سارے رنگ

میری ماں سے زندہ ہیں

ہدایت سائر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(416) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hidayat Sayer, Mere Dunya K Sare Rang Mere Maan Se Zinda Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Social, Friendship Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Social, Friendship poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hidayat Sayer.