Tum Aksar Mujh Se Kehte Ho

تم اکثر مجھ سے کہتے ہو

تم اکثر مجھ سے کہتے ہو

محبت یہ نہیں ہوتی ،محبت وہ نہیں ہوتی !

مجھے بس یہ بتا دو تم!

محبت کیا نہیں ہوتی؟

محبت تو ازل کی آنکھ سے لے کر

ابد کے سبز ماتھے تک

تنی وہ ڈور ہوتی ہے کہ جس میں بندھنے والوں کو

کوئی مشکل ، کوئی طوفان جدائی دے نہیں سکتا

رہائی دے نہیں سکتا

محبت صبر کے پیڑوں پہ اگنے والا پھل ہے جو

فقط اس کو ہی ملتا ہے کہ جس میں صبر ہوتا ہے

محبت کو سمجھ رکھا ہے کیا تم نے؟

یہ وہ دھاگا نہیں ہے جو ذرا سے اک کھچاﺅ پر

کبھی بھی ٹوٹ جائے گا

مقدر پھوٹ جائے گا

مرے ہاتھوں سے تیرا مخملیں سا ہاتھ اک پل میں

کہیں بھی چھوٹ جائے گا

یقیں جانو!

محبت میں کبھی ایسا نہیں ہوتا

محبت ایسی بیڑی ہے

جسے دو چاہنے والے اگر پہنیں

تو پھر وہ کھل نہیں سکتی

رہائی مل نہیں سکتی

محبت دائرہ ہے

اور ایسا دائرہ جس میں فقط بس رقص ہوتا ہے

نگاہوں میں کسی کا عکس ہو تا ہے

میں تیرے عکس کو آنکھوں میں لے کر دیکھتا ہوں تومجھے محسوس ہوتا ہے

تو سر تا پا محبت ہے

محبت دائرے میں اب مجھے تا عمر رہنا ہے

تمہارے ساتھ جینا ہے

تمہارے ساتھ مرنا ہے

محبت دائرے میں اب ہمیشہ رقص کرنا ہے

ہدایت سائر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(494) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hidayat Sayer, Tum Aksar Mujh Se Kehte Ho in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hidayat Sayer.