Almiya

المیہ

دریچے میں کھڑی بارش کو

سڑکوں پر برستے دیکھتی ہوں

سوچتی ہوں

دکھ کو اپنے نام کیا دوں میں

تمناؤں کو گروی رکھ کے

خوابوں کے سبھی دربند کر کے

کتنی مشکل سے

چھڑا کر اپنا دامن

چھت اور آنگن کی تمنا سے

فقط اک گھر کی خواہش میں

یہ زنداں مول لے کر

اس پہ اپنے نام کی تختی لگائی ہے

بس اک خواہش ہے جو

ساون رتوں میں

دل بہت بے چین رکھتی ہے

کہ میں ساون کی

ٹھنڈی نرم بوچھاروں کا

ریشم لمس

اپنے تن بدن پر اوڑھ لیتی

ہے مگر کچھ یوں

میں بارش دیکھ تو سکتی ہوں

اس کو چھو نہیں سکتی

حمیرا راحت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(330) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Humaira Rahat, Almiya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Humaira Rahat.