Kuch Dil Se Kissi Ne Keh Diya Phir

کچھ دل سے کسی نے کہہ دیا پھر

کچھ دل سے کسی نے کہہ دیا پھر

وحشت کا چلے گا سِلسلہ پھر

پھولوں پہ دھنک کی بارشیں ہیں

خوشبو سے ہُوا ہے رابطہ پھر

بے نام رفاقتوں کا موسم

زخموں کے چمن کھِلا گیا پھر

خوابوں سے ڈری ہوئی تھیں آنکھیں

ڈرڈر کے کیا ہے حوصلہ پھر

آنکھیں تھیں اُداس مُسکرا دیں

پیاسا تھا بدن چھلک پڑا پھر

پتھراؤ سے کب تلک بچیں گے

پھر ٹوٹ گیا جو آئینہ پھر

پھر شہر کے سارے داستاں گو

دُہرائیں گے ایک واقعہ پھر

افتخار عارف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(304) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Iftikhar Arif, Kuch Dil Se Kissi Ne Keh Diya Phir in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 108 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Iftikhar Arif.