Pass Gard E Jaada Dard Noor Ka Qafla Bhi Tu Dekhte

پسِ گردِ جادۂ درد نور کا قافلہ بھی تو دیکھتے

پسِ گردِ جادۂ درد نور کا قافلہ بھی تو دیکھتے

جو دلوں سے ہو کے گزر رہا ہے وہ راستہ بھی تو دیکھتے

یہ دھواں جو ہے یہ کہاں کا ہے وہ جو آگ تھی وہ کہاں کی تھی

کبھی راویانِ خبر زدہ پسِ واقعہ بھی تو دیکھتے

یہ گلو گرفتہ و بستۂ رسنِ جفا، مرے ہم قلم!

کبھی جابروں کے دلوں میں خوفِ مکالمہ بھی تو دیکھتے

یہ جو پتھروں میں چھپی ہوئی ہے شبیہ ،یہ بھی کمال ہے

وہ جو آئینے میں ہُمک رہا ہے وہ معجزہ بھی تو دیکھتے

جو ہوا کے رُخ پہ کھلے ہوئے ہیں وہ بادباں تو نظر میں ہیں

وہ جو موجِ خوں سے الجھ رہا ہے وہ حوصلہ بھی تو دیکھتے

یہ جو آبِ زر سے رقم ہوئی ہے یہ داستاں بھی مستند

وہ جو خونِ دل سے لکھا گیا ہے وہ حاشیہ بھی تو دیکھتے

میں تو خاک تھا کسی چشمِ ناز میں آگیا ہوں تو مِہر ہوں

مرے مہرباں کبھی اک نظر مرا سلسلہ بھی تو دیکھتے

افتخار عارف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(281) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Iftikhar Arif, Pass Gard E Jaada Dard Noor Ka Qafla Bhi Tu Dekhte in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 108 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Iftikhar Arif.