Yeh Bastiyaan Hain K Maqtal Dua Kiye Jayeen

یہ بستیاں ہیں کہ مقتل دُعا کیے جائیں

یہ بستیاں ہیں کہ مقتل دُعا کیے جائیں

دُعا کے دِن ہیں مسلسل دُعا کیے جائیں

کوئی فغاں، کوئی نالہ، کوئی بُکا، کوئی بَین

کھلے گا بابِ مقفّل دُعا کیے جائیں

یہ اضطراب، یہ لمبا سفر، یہ تنہائی

یہ رات اور یہ جنگل دُعا کیے جائیں

بحال ہو کے رہے گی فضائے خطۂ خیر

یہ حبس ہو گا معطّل دُعا کیے جائیں

گذشتگانِ محبت کے خواب کی سوگند

وہ خواب ہو گا مکمل دُعا کیے جائیں

ہوائے سرکش و سفّاک کے مقابل بھی

یہ دل بجھیں گے نہ مشعل دُعا کیے جائیں

غبار اُڑاتی جھلستی ہوئی زمینوں پر

امڈ کے آئیں گے بادل دُعا کیے جائیں

قبول ہونا مقدر ہے حرفِ خالص کا

ہر ایک آن ہر اک پل دُعا کیے جائیں

افتخار عارف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(252) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Iftikhar Arif, Yeh Bastiyaan Hain K Maqtal Dua Kiye Jayeen in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 108 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Iftikhar Arif.