Khawab Bhar Andhera

خواب بھر اندھیرا

جیسے کافی ہوتا ہے

خواب بھر اندھیرا

کسی برباد ٹیلے کی اوٹ میں

کوئی بھولی ہوئی نیند گذارنے کےلئے

ایک سرمئی شام کا

خاموش کونا

کسی درد بھرے گیت کی

آخری سسکی کے لئے

اپنے بادل سے بچھڑا ہوا

ایک چھوٹا سا ابر پارہ

ریت پر گرے ہوئے

مسافر کی موت پر

مہربان چھائوں کےلئے

ایک نہ رویا ہوا

مجبور آنسو

سینے میں دہکتا جہنم

بجھانے کے لئے

میرے لئے کافی ہیں

تھوڑی سی مٹی

اور چند افسردہ پھول

تمہاری گلابی مٹھیوں میں

محبت اور جدائی کی ابدیت کےلئے

افتخار بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(450) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Iftikhar Bukhari, Khawab Bhar Andhera in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Iftikhar Bukhari.