Hansnay MeiN Ronay Ki Aadat Kabhi Aesi Tu Na Thi

ہنسنے میں رونے کی عادت کبھی ایسی تو نہ تھی

ہنسنے میں رونے کی عادت کبھی ایسی تو نہ تھی

تیری شوخی غم فرقت کبھی ایسی تو نہ تھی

اشک آ جائیں تو پلکوں پہ بٹھاؤں گا انہیں

قطرۂ خوں تری عزت کبھی ایسی تو نہ تھی

کشت غم اور بھی لہرانے لگی ہنسنے لگی

چشم نم تیری شرارت کبھی ایسی تو نہ تھی

کتنے غم بھول گیا شکریہ تیرا غم یار

یوں مجھے تیری ضرورت کبھی ایسی تو نہ تھی

وہ مجسم بھی جو آ جائے تو دیکھوں نہ اسے

میری اس بت کی عبادت کبھی ایسی تو نہ تھی

دیر تک بیٹھے پہ کچھ تو نے نہ میں نے ہی کہا

جیسی تجھ سے ہے رفاقت کبھی ایسی تو نہ تھی

ایک اک شعر سے ٹپکے ہیں لہو کے قطرے

میری دشمن یہ طبیعت کبھی ایسی تو نہ تھی

اعجاز عبید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(463) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ijaz Obaid, Hansnay MeiN Ronay Ki Aadat Kabhi Aesi Tu Na Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ijaz Obaid.