Apna Apna Dukh Batlana Hota Hai

اپنا اپنا دکھ بتلانا ہوتا ہے

اپنا اپنا دکھ بتلانا ہوتا ہے

مٹی سے تصویر میں آنا ہوتا ہے

میری صبح ذرا کچھ دیر سے ہوتی ہے

مجھے کسی کو خواب سنانا ہوتا ہے

نئے نئے منظر کا حصہ بنتا ہوں

جیسے جیسے جسم پرانا ہوتا ہے

اک چڑیا مجھ سے بھی پہلے اٹھتی ہے

جیسے اس کو دفتر جانا ہوتا ہے

یار کتابیں کتنی جھوٹی ہوتی ہیں

ان میں کوئی اور زمانہ ہوتا ہے

گھر کے اندر اتنی گلیاں پڑتی ہیں

کبھی کبھار ہی باہر جانا ہوتا ہے

الیاس بابر اعوان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(599) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ilyas Babar Awan, Apna Apna Dukh Batlana Hota Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a , and the type of this Nazam is Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ilyas Babar Awan.