Ishq Karta Hon, Taqaza Nahi Kar Sakta Main

عشق کرتا ہوں، تقاضا نہیں کر سکتا میں

عشق کرتا ہوں، تقاضا نہیں کر سکتا میں

مرا دامن ہے سو میلا نہیں کر سکتا میں

اتنی فرصت ہے کہ اک دنیا بنا سکتا ہوں

پر کوئی ہے جسے اپنا نہیں کر سکتا میں

کتنے لوگوں نے ان آنکھوں سے شفا پائی ہے

ایک بیمار کو اچھا نہیں کر سکتا میں

گھر سے نکلا تو یہ ممکن ہے بھٹک ہی جاؤں

یار اب اپنا تو پیچھا نہیں کر سکتا میں

رات بھر شور مچاتا ہے کسی خوف کے تحت

اپنے ہم زاد پہ پرچہ نہیں کر سکتا میں

آخری سانس ہے کچھ مجھ پہ کرم ہو صیاد

دیکھ اب اور تماشا نہیں کر سکتا میں

بھیک بھی چاہیے اس دست سخی سے مجھ کو

اور دامن بھی کشادہ نہیں کر سکتا میں

الیاس بابر اعوان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(669) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ilyas Babar Awan, Ishq Karta Hon, Taqaza Nahi Kar Sakta Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ilyas Babar Awan.