Kafeel Saat Siyar Rakha Hota Hai

کفیل ساعت سیار رکھا ہوتا ہے

کفیل ساعت سیار رکھا ہوتا ہے

کہ ہم نے دل یونہی سرشار رکھا ہوتا ہے

میں رکھ کے جاتا ہوں کھڑکی میں کچھ گلاب کے پھول

کسی نے سایۂ دیوار رکھا ہوتا ہے

عجیب لوگ ہیں دیوار شب پہ چلتے ہیں

چراغ جیب میں بے کار رکھا ہوتا ہے

کبھی کبھار اسے پھل پھول لگنے لگتے ہیں

ہمارے شانوں پہ جو بار رکھا ہوتا ہے

عجیب شہر ہے پتھر اسی پہ آتا ہے

جو آئنہ پس دیوار رکھا ہوتا ہے

الیاس بابر اعوان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(426) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ilyas Babar Awan, Kafeel Saat Siyar Rakha Hota Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ilyas Babar Awan.