Sirf Azaar Uthanay Say Kahan Banta Hai

صرف آزار اٹھانے سے کہاں بنتا ہے

صرف آزار اٹھانے سے کہاں بنتا ہے

مجھ سا اسلوب زمانے سے کہاں بنتا ہے

آنکھ کو کاٹ کے کچھ نوک پلک سیدھی کی

زاویہ سیدھ میں آنے سے کہاں بنتا ہے

کچھ نہ کچھ اس میں حقیقت بھی چھپی ہوتی ہے

واقعہ بات بنانے سے کہاں بنتا ہے

حسن یوسف سی کوئی جنس بھی رکھو اس میں

ورنہ بازار سجانے سے کہاں بنتا ہے

اس میں کچھ وحشت دل بھی تو رکھی جاتی ہے

باغ بس پھول اگانے سے کہاں بنتا ہے

راستہ بنتا ہے تشکیل نظر سے بابرؔ

خاک کی خاک اڑانے سے کہاں بنتا ہے

الیاس بابر اعوان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ilyas Babar Awan, Sirf Azaar Uthanay Say Kahan Banta Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ilyas Babar Awan.