Aagle Panch Dinoon Tak Jeena Chahta Hoon

اگلے پانچ دنوں تک جینا چاہتا ہوں

اگلے پانچ دنوں تک جینا چاہتا ہوں

رو لوں گا پر پہلے ہنسنا چاہتا ہوں

میری آنکھوں کے اب پاؤں کانپتے ہیں

اس کو میں جی بھر کے تکنا چاہتا ہوں

میں صحرا ہوں کچھ بدلاؤ لازمی ہے

اب میں دریا بن کر بہنا چاہتا ہوں

دنیا والو آخر کار ترابی ہوں

میں ہاتھوں پر سورج دھرنا چاہتا ہوں

اس کے ہر انداز کو سانسیں دے کر میں

اس کے ہر انداز پہ مرنا چاہتا ہوں

بہری نہیں ہے نوک سناں کی سن لے گی

سر ہوں اور تلاوت کرنا چاہتا ہوں

جو تیرے پہلو پر ہے اس گاگر سے

اذن ملے تو پانی پینا چاہتا ہوں

تیرا لمس بھی دوسرا نام ہے اگنی کا

چھو لے مجھ کو اب میں جلنا چاہتا ہوں

عمران راہب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1185) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Imran Rahib, Aagle Panch Dinoon Tak Jeena Chahta Hoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Imran Rahib.