Apni Apni Majboori Se Haare Rehte Hain

اپنی اپنی مجبوری سے ہارے رہتے ہیں

اپنی اپنی مجبوری سے ہارے رہتے ہیں

محرومی کے بوجھ تلے بے چارے رہتے ہیں

بھوک، معاشی بدحالی اور بیماری سے تنگ

دونوں ہی ملکوں میں غم کے مارے رہتے ہیں

کون بھلا پھیلائےامن و محبت کا پیغام

شاعر بن کر نفرت کے ہرکارے رہتے ہیں

میرے پیارے ہی رہتے ہیں سرحد کے اِس پار

سرحد کے اُس پار بھی میرے پیارے رہتے ہیں

دن بھر پھرتے رہتے ہیں لاھور کی گلیوں میں

رات کو ہم دلّی میں پاؤں پسارے رہتے ہیں

آپ کے پیارے بلھے شاہ کا مسکن اِدھر قصور

اور اُدھر غالب اور میر ہمارے رہتے ہیں

ایک ہی ساگر بنتا ہے پانی کا انت پڑاؤ

الگ الگ چاہے دریا کے دھارے رہتے ہیں

عرفان ستار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(395) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Irfan Sattar, Apni Apni Majboori Se Haare Rehte Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 92 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Irfan Sattar.