Lafzon Ke Baratnay Main Bohat Sirf -howa Main

لفظوں کے برتنے میں بہت صرف ہوا میں

لفظوں کے برتنے میں بہت صرف ہوا میں

اک مصر تازہ بھی مگر کہہ نہ سکا میں

اک دست رفاقت کی طلب لے کے بڑھا میں

انبوہ طرحدار میں اک شور اٹھا میں

آ تجھ کو تقابل میں الجھنے سے بچا لوں

سب کچھ ہے تری ذات میں باقی جو بچا میں

میں اور کہاں خود‌ نگری یاد ہے تجھ کو

جب تو نے مرا نام لیا میں نے کہا میں

میں ایک بگولہ سا اٹھا دشت جنوں سے

روکا مجھے دنیا نے بہت پر نہ رکا میں

یا مجھ سے گزاری نہ گئی عمر گریزاں

یا عمر گریزاں سے گزارا نہ گیا میں

معلوم ہوا مجھ میں کوئی رمز نہیں ہے

اک عمر ریاضت سے گزرنے پہ کھلا میں

جو رات بسر کی تھی مرے ہجر میں تو نے

اس رات بہت دیر ترے ساتھ رہا میں

عرفان ستار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(441) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Irfan Sattar, Lafzon Ke Baratnay Main Bohat Sirf -howa Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 92 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Irfan Sattar.