Wasal Ka Aish Ghalat Hijr K Ghaam Jhote Hain

وصل کا عیش غلط، ہجر کے غم جھوٹے ہیں

وصل کا عیش غلط، ہجر کے غم جھوٹے ہیں

چند کو چھوڑ کے سب اہل_قلم جھوٹے ہیں

اپنا رستہ یہاں خود ڈھونڈنا پڑتا ہے میاں

عشق کی راہ میں سب نقش ِ قدم جھوٹے ہیں

اولاً ہم تھے جنھیں خواب کا آزار ملا

اور تُو پھر بھی سمجھتا ہے کہ ہم جھوٹے ہیں

کم سے کم کہتے وہی ہیں کہ جو دل مانتا ہے

یعنی ہم جھوٹے اگر ہیں بھی تو کم جھوٹے ہیں

ہے کوئی اور ہی اقلیم جو شاید سچ ہو

یہ مگر طے ہے وجود اور عدم جھوٹے ہیں

تم بھلا کون، کسی حرف کے تقدیر کشا؟

وقت کو فیصلہ کرنے دو کہ ہم جھوٹے ہیں

راہ عرفان محبت کی ہے سیدھی، سچی

اب کھلا ہم پہ کہ اس راہ کے خم جھوٹے ہیں

عرفان ستار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(816) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Irfan Sattar, Wasal Ka Aish Ghalat Hijr K Ghaam Jhote Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 92 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Irfan Sattar.