Zawaal Shab Main Kisi Ki Sada Nikal Aaye

زوال شب میں کسی کی صدا نکل آئے

زوال شب میں کسی کی صدا نکل آئے

ستارہ ڈوبے ستارہ نما نکل آئے

عجب نہیں کہ یہ دریا نظر کا دھوکا ہو

عجب نہیں کہ کوئی راستہ نکل آئے

یہ کس نے دست بریدہ کی فصل بوئی تھی

تمام شہر میں نخل دعا نکل آئے

بڑی گھٹن ہے چراغوں کا کیا خیال کروں

اب اس طرف کوئی موج ہوا نکل آئے

خدا کرے صف سر دادگاں نہ ہو خالی

جو میں گروں تو کوئی دوسرا نکل آئے

عرفان صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1386) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Irfan Siddiqui, Zawaal Shab Main Kisi Ki Sada Nikal Aaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 69 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Irfan Siddiqui.