Makan Se La Makan K Daire Tey Kar Raha Hoon

مکاں سے لا مکاں کے داٸرے طے کر رہا ہوں

مکاں سے لا مکاں کے داٸرے طے کر رہا ہوں

اُسے پہچاننے کے مرحلے طے کر رہا ہوں

مصلّے پر جو بیٹھا اُڑ رہا ہوں سُوٸے کعبہ

تو سر بستہ سفر کے سلسلے طے کر رہا ہوں

ابھی لا علم ہوں میں عشق کی سب منزلوں سے

ابھی تو میں خرَد کے راستے طے کر رہا ہوں

تساہُل کے بچھونے پر میں سویا ہوں بظاہر

مگر اِس نیند میں بھی رتجگے طے کر رہا ہوں

مجھے پھر چاند کی کرنوں نے شب بھر چاٹنا ہے

ابھی سُورج کے میں کچھ مسٸلے طے کر رہا ہوں

وحیدُالعصر سے کہہ دو کہ وہ چہرہ چھپا لے

میں اُس کے واسطے اب آٸینے طے کر رہا ہوں

دما دم آنسووں کا رقص ہے آنکھوں میں میری

دما دم میں غناٸی غم کدے طے کر رہا ہوں

عیاں ہے وہ مرے دل کے نہاں خانوں میں واصف

میں راہ ِ شوق میں کیوں آبلے طے کر رہا ہوں

جبار واصف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1481) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jabbar Wasif, Makan Se La Makan K Daire Tey Kar Raha Hoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social, Sufi Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social, Sufi poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jabbar Wasif.