Tasht Main Dhoop K Har Simat Zameen Hai Roshan

طشت میں دھوپ کے ہر سمت زمیں ہے روشن

طشت میں دھوپ کے ہر سمت زمیں ہے روشن

جگمگاتا ہے مکاں اور مکیں ہے روشن

مرغ و ماہی کے بیاں سے نہ گریزاں رہنا

خوان پر گرچہ ابھی نان جویں ہے روشن

بوسہ دیتے ہوئے پتھر کو قدم تیز کرو

درمیاں سنگ کے اک شہر نگیں ہے روشن

بزم یاراں میں مچی دھوم نے ظلمت لکھی

نرم لہجے میں کوئی گوشہ نشیں ہے روشن

رات کے سر پہ ہے اجلا سا دوپٹہ جعفرؔ

ہو نہ ہو صحن محبت بھی کہیں ہے روشن

جعفر ساہنی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(924) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jafar Sahni, Tasht Main Dhoop K Har Simat Zameen Hai Roshan in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 38 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jafar Sahni.