Aaine Sach Nahi Bolte

آئینے سچ نہیں بولتے

تب

اُس نے آئینہ دیکھا

تو

بالوں پر جمی برف کو

چاندی نہ کہہ سکا!

،،میرے بالوں میں جمی برف

چاندی نہیں ہو سکتی

چاندی تو دنیا کے ہر بازار کو

لہو کی طرح رواں رکھتی ہے!

میں بازار نہیں

کسی غریب گلی کا وہ موڑ ہوں

جہاں کوئی نہیں رکتا

جس موڑ پر ثبت ہونے والے نقوش پا کی تاک میں

ہوائیں رہتی ہیں

اور سنار بازار سے سونے کے ریزے سمیٹ کر

اونچی حویلیوں کے آنگنوں کو

سٹاک ایکسچینج کی عمارتوں میں بدل دیتی ہیں،،!

میں خوابوں کے راستے پر بھٹکتا

جس شہر ِ بیمار میں داخل ہوا

اُس کے آئینے کائی زدہ تھے

وہ دشت ِ عذاب کے حصار میں تھا

اور

اُس کےسُکھوں کی کلیدکی چاندی

اُن شہریاروں کے قبضے میں تھی

منڈیاں جن کی ملکیت

اور نرخ

جن کی جنبش ابرو کے منتظر تھے!

میرے پاس عمر کی نقدی تھی

اور

مجھے کسی کے لئے

چاندی کی ضرورت تھی

مگر میرے بالوں میں

صحرا کی ریت اور برف بھر دی گئی

مجھے دشت ِ عذاب کا حصار توڑنے والے

سبھی اسم بھلا دیئے گئے!

میں نے دیکھا

کہ جو لوگ

جھلستی ہوئی دھوپ کو

سورج کا پگھلا ہوا سونا کہتے ہیں

اُن کے میزان کے پلڑے کبھی مساوی نہیں ہوتے

(لیکن اُنہیں پلڑے برابر دکھانے کا ہنر آتا ہے)!

دیکھو

میرے سیاہ سر سے جھانکتے سفید بال

کسی ترازو کی ڈنڈی نہیں بن سکتے

نہ کوئی کہانی بُن سکتے ہیں

جھلستی ہوئی دھوپ کے ہاتھوں

جس تماشے کی مسافت میں

سیاہ و سپید کا یہ کھیل کھیلا گیا

اُس میں یقین و گماں نے صرف

خوف کے بیج اور انہونیوں کے عذاب بوئے تھے،،!

لیکن

وہ

جو سچ اور محبت کی تلاش میں نکلا تھا

یہ کیوں نہیں سمجھتا

کہ سچ اور محبت کی راہ میں

آئینہ دیکھنے کی ضرورت ہی کیا ہے؟؟؟؟!!!!!

جمیل الرحمان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(517) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jameel Ur Rahman, Aaine Sach Nahi Bolte in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jameel Ur Rahman.