Aik Nayi Tota Kahani

ایک نئی طوطا کہانی

کینچوے کھا گئے ساری مٹی

پی گئے کوبرے سارا دودھ

بُھربھرے شہر کی سرد فضا میں

دن کے پاؤں پتھر ہو گئے

تیرہ گلیاں بھاگ رہی ہیں

خوابوں کے برباد مکاں میں

راتوں کی زنجیر ہلاتے

نقش ہجر سے فال اٹھاتے

قیدی طوطے جاگ رہے ہیں

ساکت وصامت ادھڑا منظر

اکھڑے رنگوں میں لٹکا ہے

خوشبو لکڑی چاٹ رہی ہے

تصویروں پر خون جما ہے

خاکہ خط میں بھٹک رہا ہے

سینوں میں ہڑبونگ مچی ہے

وقت کے سیلابی ریلے میں

آنکھیں رستے کاٹ رہی ہیں

اور اطراف کے دروازوں پر

بھیڑ لگی ہے

شہزادے کا گھوڑا سرپٹ بھاگ رہا ہے

آگے آگے

اندھی گلیاں

پیچھے پیچھے

پتھریلے دن کی آوازیں

اور ان سب کے عقب میں اک انگوٹھی

تیز ہوا میں شور مچا کر

گرتے ہوئے مکانوں کے ملبے پر

چمک رہی ہے!

جمیل الرحمان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(696) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jameel Ur Rahman, Aik Nayi Tota Kahani in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jameel Ur Rahman.