Khali Khali Gher Lagta Hai

خالی خالی گھر لگتا ہے

خالی خالی گھر لگتا ہے

اپنے آپ سے ڈر لگتا ہے

پھول پہ شبنم کا یہ موتی

میرا دامن تر لگتا ہے

کون ہمارے آنسو پونچھے

صبر ہی چارہ گر لگتا ہے

اتنی تنگ ہیں دیواریں کہ

پاؤں بچائیں, سر لگتا ہے

اس چادر میں چھید ہوئے ہیں

جس میں لعل, گہر لگتا ہے

پیوند خاک پہ پتھر کا ہے

کب سنگِ مر مر لگتا ہے

تجھ سے چرخ ہے ایسا ناطہ

ہر ہر اشک قمر لگتا ہے

جمیل قمر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(483) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jamil Qamar, Khali Khali Gher Lagta Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jamil Qamar.