Woh Kya Kuch Nah Karnay Walay Thay

وہ کیا کچھ نہ کرنے والے تھے

وہ کیا کچھ نہ کرنے والے تھے

بس کوئی دم میں مرنے والے تھے

تھے گلے اور گرد باد کی شام

اور ہم سب بکھرنے والے تھے

وہ جو آتا تو اس کی خوشبو میں

آج ہم رنگ بھرنے والے تھے

صرف افسوس ہے یہ طنز نہیں

تم نہ سنورے سنورنے والے تھے

یوں تو مرنا ہے ایک بار مگر

ہم کئی بار مرنے والے تھے

جون ایلیا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2655) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jaun Elia, Woh Kya Kuch Nah Karnay Walay Thay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 195 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jaun Elia.