Naya Manzar Na Badley Ga Purani Shaan Likhne Se

نیا منظر نہ بدلے گا پرانی شان لکھنے سے

نیا منظر نہ بدلے گا پرانی شان لکھنے سے

تمھیں تاریخ روکے گی نئے امکان لکھنے سے

وہ جس کو جنگ کہتے ہیں وہ اک کارِ مذمت ہے

کوئی عزت نہیں ملتی اُسے گھمسان لکھنے سے

قصیدہ اور شاہوں کا مرے مولا بچانا تو

ہے بہتر ہاتھ کٹ جائیں کسی کی شان لکھنے سے

مجھے حیرت ہے پڑھنے سے اثر تم پر نہیں ہوتا

بڑھا جاتا ہے اللہ پر مرا ایمان لکھنے سے

محبت کو چھپانا ہے تو تھوڑا سا تعلق رکھ

یہ دنیا سب سمجھ لے گی مجھے انجان لکھنے سے

خبر مجھ کو اگر ہوتی تو پہلے شاعری کرتا

نہ تھی جو ملتفت یارو ہوئی قربان لکھنے سے

مرے لفظوں میں دھڑکن ہے یہ سارے سانس لیتے ہیں

خدا محفوظ رکھتا ہے مجھے بے جان لکھنے سے

نہ ہوتا گر قلم اخترؔ تمھارے پاس کیا ہوتا؟

تمھاری شان لکھنے سے تمھاری آن لکھنے سے

جنید اختر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(525) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Junaid Akhter, Naya Manzar Na Badley Ga Purani Shaan Likhne Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Junaid Akhter.