Wo Ju Andar Kahin Pey Palta Hai

وہ جو اندر کہیں پہ پلتا ہے

وہ جو اندر کہیں پہ پلتا ہے

دل اُسی خوف سے تو ڈرتا ہے

اور سب کے ہیں منزلوں پہ مگر

اک مرا قافلہ بھٹکتا ہے

میں نے تو اک دیا جلایا تھا

کیوں یہ سارا جہان جلتا ہے

پوچھیے، ہر بار گرنے والے سے

مسئلہ کیا ہے کیوں سنبھلتا ہے

وہ مٹائے تو خاک بچتی ہے

میں بچاؤں تو خاک بچتا ہے

لوگ دل کے لیے مچلتے ہیں

دل تمھارے لیے مچلتا ہے

میری ایسی زبان ہے اخترؔ

چپ رہوں میں تو شور مچتا ہے

جنید اختر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(536) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Junaid Akhter, Wo Ju Andar Kahin Pey Palta Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Junaid Akhter.