Bujhti Ragoon Main Noor Bikharta Hua Sa Main

بجھتی رگوں میں نور بکھرتا ہوا سا میں

بجھتی رگوں میں نور بکھرتا ہوا سا میں

طوفان ننگ موج گزرتا ہوا سا میں

ہر شب اجالتی ہوئی بھیگی رتوں کے خواب

اور مثل عکس خواب بکھرتا ہوا سا میں

موج طلب میں تیر گیا تھا بس ایک نام

پھر یوں ہوا کہ جی اٹھا مرتا ہوا سا میں

اک دھند سی فلک سے اترتی دکھائی دے

پھر اس میں عکس عکس سنورتا ہوا سا میں

دست دعا اٹھا تو اٹھا اس کے ہی حضور

لیکن یہ کیا اسی سے مکرتا ہوا سا میں

اب کے ہوا چلے تو بکھر جاؤں دور تک

لیکن تری گلی میں ٹھہرتا ہوا سا میں

میں بجھ گیا تو کون اجالے گا تیرا روپ

زندہ ہوں اس خیال میں مرتا ہوا سا میں

اجملؔ وہ نیم شب کی دعائیں کہاں گئیں

اک شور آگہی ہے بکھرتا ہوا سا میں

کبیر اجمل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(959) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Kabir Ajmal, Bujhti Ragoon Main Noor Bikharta Hua Sa Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Kabir Ajmal.