Bala Ki Piyas Thi Had Nazar Main Paani Tha

بلا کی پیاس تھی حد نظر میں پانی تھا

بلا کی پیاس تھی حد نظر میں پانی تھا

کہ آج خواب میں صحرا تھا گھر میں پانی تھا

پھر اس کے بعد مری رات بے مثال ہوئی

ادھر وہ شعلہ بدن تھا ادھر میں پانی تھا

نہ جانے خاک کے مژگاں پہ آبشار تھا کیا

مرا قصور تھا میرے شرر میں پانی تھا

تمام عمر یہ عقدہ نہ وا ہوا مجھ پر

کہ ہاتھ میں تھا یا چشم خضر میں پانی تھا

عجیب دشت تمنا سے تھا گزر خالدؔ

بدن میں ریگ رواں تھی سفر میں پانی تھا

خالد کرار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(847) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khalid Karrar, Bala Ki Piyas Thi Had Nazar Main Paani Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khalid Karrar.