Suno Ab Hum Mohabbat Main Buhat Aage Nikaal Aaye

سنو! اب ہم محبت میں بہت آگے نکل آئے

سنو! اب ہم محبت میں بہت آگے نکل آئے

کہ اک رستے پہ چلتے چلتے سو رستے نکل آئے

اگرچہ کم نہ تھی، چارہ گران شہر کی پرسش

مگر! کچھ زخم نا دیدہ بہت گہرے نکل آئے

محبت کی تو کوئی حد، کوئی سرحد نہیں ہوتی

ہمارے درمیاں یہ فاصلے، کیسے نکل آئے

بہت دن تک حصار نشہ یکتائی میں رکھا

پھر اس چہرے کے اندر بھی کئی چہرے نکل آئے

پرانے زخم بھرتے ہی، نئے زخموں کے شیدائی

مزاج آئنہ اوڑھے ہوئے گھر سے نکل آئے

تضاد ذات کے باعث کھلا وہ کم سخن ایسا

ادھوری بات کے مفہوم بھی پورے نکل آئے

خالد معین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1442) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khalid Moin, Suno Ab Hum Mohabbat Main Buhat Aage Nikaal Aaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khalid Moin.