Hum K Thay Khushfehem Din Ki Bepanahi Dekh Kar

ہم کہ تھے خوش فہم دن کی بے پناہی دیکھ کر

ہم کہ تھے خوش فہم دن کی بے پناہی دیکھ کر

ہاتھ ملتے رہ گئے شب کی سیاہی دیکھ کر

کون دامن دیکھتا ہے کون سنتا ہے دلیل

جرم ثابت ہو رہا ہے بے گناہی دیکھ کر

ہم نہ کہتے تھے دنوں میں اک ہمارا دن بھی ہے

دن بدلتے ہیں ہماری داد خواہی دیکھ کر

دلبری سے خود پرستی نے رکھا نا آشنا

رکتے رکتے رک گئے ہم کم نگاہی دیکھ کر

حرف بے معنی سے بہتر ہے نوائے بے صدا

رو پڑا میں وقت کی ویراں نگاہی دیکھ کر

خاک پر لکھے گئے ہم خاک پر رکھے گئے

لہلہائے سبزگی کی خوش گیاہی دیکھ کر

دل نشیں ہے غنچۂ نو وقت لیکن کب تلک

دل لہو ہے شاخ گل کی کج کلاہی دیکھ کر

کتنے ایسے درد ہیں جن کی دوا چاہی گئی

سوچتا ہوں زخم دل کی بار گاہی دیکھ کر

دیدۂ سیلاب جو کی دشت پیرائی خمار

عالم خاشاک کی دیکھی تباہی دیکھ کر

خمار میرزادہ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(740) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khumar Mirzada, Hum K Thay Khushfehem Din Ki Bepanahi Dekh Kar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khumar Mirzada.