Khursheed Rizvi Poetry, Khursheed Rizvi Shayari

خورشید رضوی - Khursheed Rizvi

ایبٹ آباد

مشہور شاعر خورشید رضوی کی شاعری ۔ نظمیں اور غزلیں

پلٹ کر اشک سوئے چشم تر آتا نہیں ہے

خورشید رضوی

بنا رہے کوئی دم نقش پا سے کون کہے

خورشید رضوی

یہی ہے عشق کہ سر دو مگر دہائی نہ دو

خورشید رضوی

یوں تو وہ شکل کھو گئی گردش ماہ و سال میں

خورشید رضوی

بساط وقت پہ صدیوں کے فاصلے ہم لوگ

خورشید رضوی

گو نظر اکثر وہ حسن لازوال آ جائے گا

خورشید رضوی

کہیں بھی مقام صدائے لب نہیں آ سکا

خورشید رضوی

کل میں انہی رستوں سے گزرا تو بہت رویا

خورشید رضوی

دل کو پیہم وہی اندوہ شماری کرنا

خورشید رضوی

بڑا عجیب سماں آج رات خواب میں تھا

خورشید رضوی

آئیے رو لے کہیں، رونے سے چین آ جائے گا

خورشید رضوی

اب سے پہلے وہ مری ذات پہ طاری تو نہ تھا

خورشید رضوی

شان ان کی سوچئے اور سوچ میں کھو جائیے

خورشید رضوی