Sir Kat Ke Kar Dijiyea Qatil Ke Hawalay

سر کاٹ کے کر دیجئے قاتل کے حوالے

سر کاٹ کے کر دیجئے قاتل کے حوالے

ہمت مری کہتی ہے کہ احسان بلا لے

ہر قطرۂ خوں سوز دروں سے ہے اک اخگر

جلاد کی تلوار میں پڑ جائیں گے چھالے

نادان نہ ہو عقل عطا کی ہے خدا نے

یوسف کی طرح تم کو کوئی بیچ نہ ڈالے

ہستی کی اسیری سے شرر سے ہیں سوا تنگ

چھوٹے تو ادھر پھر کے نہیں دیکھنے والے

سالک کو یہی جادے سے آواز ہے آتی

پامال جو ہو راہ وہ منزل کی نکالے

صیاد چمن ہی میں کرے مرغ چمن ذبح

لبریز لہو سے ہی درختوں کے ہوں تھالے

خواجہ حیدر علی آتش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(945) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khwaja Haider Ali Aatish, Sir Kat Ke Kar Dijiyea Qatil Ke Hawalay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 133 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khwaja Haider Ali Aatish.