Wehshat Dil Ne Kya Hai Woh Baiyabaan Peda

وحشت دل نے کیا ہے وہ بیاباں پیدا

وحشت دل نے کیا ہے وہ بیاباں پیدا

سیکڑوں کوس نہیں صورت انساں پیدا

سحر وصل کرے گی شب ہجراں پیدا

صلب کافر ہی سے ہوتا ہے مسلماں پیدا

دل کے آئینے میں کر جوہر پنہاں پیدا

در و دیوار سے ہو صورت جاناں پیدا

خار دامن سے الجھتے ہیں بہار آئی ہے

چاک کرنے کو کیا گل نے گریباں پیدا

نسبت اس دست نگاریں سے نہیں کچھ اس کو

یہ کلائی تو کرے پنجۂ مرجاں پیدا

نشۂ مے میں کھلی دشمنی دوست مجھے

آب انگور نے کی آتش پنہاں پیدا

باغ سنسان نہ کر ان کو پکڑ کر صیاد

بعد مدت ہوئے ہیں مرغ خوش الحاں پیدا

اب قدم سے ہے مرے خانۂ زنجیر آباد

مجھ کو وحشت نے کیا سلسلہ جنباں پیدا

رو کے آنکھوں سے نکالوں میں بخار دل کو

کر چکے ابر مژہ بھی کہیں باراں پیدا

نعرہ زن کنج شہیداں میں ہو بلبل کی طرح

آب آہن نے کیا ہے یہ گلستاں پیدا

نقش ان کا نہ کسی لعل سے لب پر بیٹھا

میرے منہ میں ہوئے تھے کس لیے دنداں پیدا

خوف نا فہمی مردم سے مجھے آتا ہے

گاؤ خر ہونے لگے صورت انساں پیدا

روح کی طرح سے داخل ہو جو دیوانہ ہے

جسم خاکی سمجھ اس کو جو ہو زنداں پیدا

بے حجابوں کا مگر شہر ہے اقلیم عدم

دیکھتا ہوں جسے ہوتا ہے وہ عریاں پیدا

اک گل ایسا نہیں ہووے نہ خزاں جس کی بہار

کون سے وقت ہوا تھا یہ گلستاں پیدا

موجد اس کی ہے سیہ روزی ہماری آتشؔ

ہم نہ ہونے تو نہ ہوتی شب ہجراں پیدا

خواجہ حیدر علی آتش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1109) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khwaja Haider Ali Aatish, Wehshat Dil Ne Kya Hai Woh Baiyabaan Peda in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 133 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khwaja Haider Ali Aatish.