Kaisi Hai Ajab Raat Yeh Kaisa Hai Ajab Shore

کیسی ہے عجب رات یہ کیسا ہے عجب شور

کیسی ہے عجب رات یہ کیسا ہے عجب شور

صحرا ہی نہیں گھر بھی مچاتا ہے عجب شور

اک درد کی آندھی مجھے رکھتی ہے ہراساں

اک آس کا جھونکا بھی اڑاتا ہے عجب شور

روشن ہے کسی آنکھ میں تاریکیٔ احوال

اک طاق تمنا میں دہکتا ہے عجب شور

اک شخص مرے آئنۂ دل کے مقابل

خاموش ہے لیکن پس چہرہ ہے عجب شور

آتی ہے بہت دور سے پازیب کی آواز

پھر میری سماعت میں چہکتا ہے عجب شور

میں ضبط کو ہر رخ سے سپر کرتا ہوں لیکن

آنکھوں سے مری جھانکتا رہتا ہے عجب شور

شاید ترا حصہ ہے کنارے کی خموشی

معلوم تجھے کیا تہ دریا ہے عجب شور

خواجہ رضی حیدر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(993) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Khwaja Razi Haider, Kaisi Hai Ajab Raat Yeh Kaisa Hai Ajab Shore in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Khwaja Razi Haider.