Wo Na Chahe Tu Main Beena Na Rahoon

وہ نہ چاہے تو میں بینا نہ رہوں

وہ نہ چاہے تو میں بینا نہ رہوں

وہ جو چاہے تو نظر بھی آئے

وہ مرے ساتھ ہے سائے کی طرح

دل کی ضد ہے کہ نظر بھی آئے

اس سے ہی اذن سفر مانگا ہے

اس سے ہی زاد سفر بھی آئے

اس نے توفیق دعا بخشی ہے

اب دعاؤں میں اثر بھی آئے

کبھی آہوں سے اٹھے باد مراد

کبھی اشکوں سے گہر بھی آئے

محمود ایاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(511) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mahmood Ayaz, Wo Na Chahe Tu Main Beena Na Rahoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 36 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mahmood Ayaz.