Aik Pal Mein Dam Guftaar Se Lab Tar Ho Jaye

ایک پل میں دم گفتار سے لب تر ہو جائے

ایک پل میں دم گفتار سے لب تر ہو جائے

تجھ سے جو بات بھی کر لے وہ سخن ور ہو جائے

اب یہاں صرف پری چہرہ رہیں گے آ کر

اور کوئی ان کے علاوہ ہے تو باہر ہو جائے

ہو گیا رشتۂ جاں پھر دل نادان کے ساتھ

اس سپاہی کی تمنا ہے کہ لشکر ہو جائے

اب کے ٹھہرائی ہے ہم نے بھی یہی شرط وفا

جو بھی اس شہر میں آئے وہ ستمگر ہو جائے

یعنی اے دیدۂ تر تیری عنایت ہے کہ بس

ورنہ میدان سخن آج ہی بنجر ہو جائے

ہم نے آشوب کے عالم میں کہی ہے یہ غزل

سو یہ خواہش ہے کہ ہر شعر گل تر ہو جائے

مہتاب حیدر نقوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(235) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mahtab Haider Naqvi, Aik Pal Mein Dam Guftaar Se Lab Tar Ho Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mahtab Haider Naqvi.