Hamein To Ab Ke Bhi Aayi Nah Raas Tanhai

ہمیں تو اب کے بھی آئی نہ راس تنہائی

ہمیں تو اب کے بھی آئی نہ راس تنہائی

تمہیں بتاؤ کہ ہے کس کے پاس تنہائی

اسے بھی اب کے بہت رنج نارسائی ہے

کھڑی ہے شہر کی سرحد کے پاس تنہائی

اسی لیے تو نہ صحرا میں ہے نہ بستی میں

کہ ہو نہ جائے کہیں بے لباس تنہائی

طویل ہجر نے دونوں کو یوں خراب کیا

کہ اس کے پاس نہ اب میرے پاس تنہائی

اندھیری رات میں آنکھوں میں خواب کی صورت

کبھی کبھی نظر آئی اداس تنہائی

مہتاب حیدر نقوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(221) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mahtab Haider Naqvi, Hamein To Ab Ke Bhi Aayi Nah Raas Tanhai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mahtab Haider Naqvi.