Aaise Hai Ager Baat Tu Yeh Baat Nahi Hai

ایسی ہے اگر بات تو یہ بات نہیں ہے

ایسی ہے اگر بات تو یہ بات نہیں ہے

کیسے میں کہوں روشنی ہے رات نہیں ہے

میں نے تو قسم کھائی ہے کہ سچ ہی لکھوں گا

حاوی کسی کی مجھ پہ کوئی ذات نہیں ہے

ہے مجھ کو خبر حق پہ ہوں تنہا ہی لڑوں گا

صد شکر مرے ساتھ کوئی ساتھ نہیں ہے

سر تن سے جدا ہو کہ جو نیزے پہ چڑھا ہو

کہتے ہیں اسے جیت نہیں مات نہیں ہے

ہر شعر امانت ہے مرے پاس خدا کی

مفہوم سمجھنا تری اوقات نہیں ہے

میں شاہ کی توصیف بیاں کر نہیں سکتا

ماجد مرے افکار میں خیرات نہیں ہے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(494) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Aaise Hai Ager Baat Tu Yeh Baat Nahi Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.