Aik Harf E Natamam Hoon Aage Ki Baat Chor

اک حرف ناتمام ہوں آگے کی بات چھوڑ

اک حرف ناتمام ہوں آگے کی بات چھوڑ

میں خاص ہوں نہ عام ہوں آگے کی بات چھوڑ

تیری طرف پڑاو ہے قسمت کا آجکل

ڈھلتی ہوئی میں شام ہوں آگے کی بات چھوڑ

سچ پوچھیے خبر نہیں اطراف کی مجھے

میں خود سے ہم کلام ہوں آگے کی بات چھوڑ

ہر اک وبال ان دنوں ہے مقتدی مرا

دکھ درد کا امام ہوں آگے کی بات چھوڑ

الجھے ہوئے ہیں زیست کے دھاگے عجیب سے

صدیوں سے زیر بام ہوں آگے کی بات چھوڑ

اوراق کالے کرنے ہیں تو مجھ پہ کر میاں

میں ہجر کامقام ہوں آگے کی بات چھوڑ

ہاں ہاں ظفر نے سچ کہا ہے زیست چار دن

گویا میں دو ہی گام ہوں آگے کی بات چھوڑ

مجھ کو زمین زاد نے کرنا نہیں قبول

ماجد برائے نام ہوں آگے کی بات چھوڑ

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1231) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Aik Harf E Natamam Hoon Aage Ki Baat Chor in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.