Aik Zarre Ko Kahan Ley Jaye Ga

ایک ذرے کو کہاں لے جائے گا

ایک ذرے کو کہاں لے جائے گا

یہ خدا کا فیصلہ بتلائے گا

آنکھ کی پتلی کے اندر رقص ہے

کج نظر کو کب نظر یہ آئے گا

سن نشانی ہے یہی کم ظرف کی

ہر کسی سے جوتیاں اٹھوائے گا

کیسے کیسے آگئے ہیں دہر میں

کیسے کیسے اس جہاں لے جائے گا

رہزنوں کے ہاتھ میں دے کر وطن

دیکھنا اک روز تو پچھتائے گا

ایک تنکے کے برابر کر دیا

اور جانے کیا سے کیا دکھلائے گا

کیا کمائی ہے ہمارے حرف کی

شاہ کا لہجہ ہمیں بتلائے گا

میری چیخوں میں چھپی اک رمز ہے

اس بہانے وہ یہاں تک آئے گا

جان لیوا سچ سے ماجد باز آ

یہ تجھے دیوار میں چنوائے گا

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(315) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Aik Zarre Ko Kahan Ley Jaye Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.