Ajeeb Bojh Hai Dil Per Samjh Se Bahir Hai

عجیب بوجھ ہے دل پر سمجھ سے باہر ہے

عجیب بوجھ ہے دل پر سمجھ سے باہر ہے

یہاں وہاں ہے کہاں گھر سمجھ سے باہر ہے

میں جھوٹ بول کےکیسے ضمیر کو بیچوں

وہ کہہ رہا ہے یونہی کر سمجھ سے باہر ہے

مرے رقیب نے کیسی یہ چال چل دی ہے

تمام بند ہوئے در سمجھ سے باہر ہے

تمارے قصر سے کس کا لہو ٹپکتا ہے

نجانے کتنے کٹے سر سمجھ سے باہر ہے

مرے عزیز ہی میری یہ جان لے لیں گے

ہر اک قدم پہ یہی ڈر سمجھ سے باہر ہے

مرے وجود کے ذرو گواہ رہنا تم

میں جیتے جی ہوں گیا مر سمجھ سے باہر ہے

خدائے پاک یہ ماجد کو راز بتلا دے

مٹے گا دہر سے کب شر سمجھ سے باہر ہے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(375) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Ajeeb Bojh Hai Dil Per Samjh Se Bahir Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.