Bashar Ko Azmata Hai

بشر کو آزماتا ہے

خدا تحریریں لکھتا ہے

جسے ہم تم مقدر کا لکھا گردانتے ہیں

خدا تحریریں پڑھتا ہے

جو ماتھے پر ہوں آویزاں

دلوں میں جو پنپتی ہوں

جو ہاتھوں کی لکیروں میں کسی کل کا پتا دیتی نظر آئیں

کسی بھی خواب کی تکمیل ہوگی کن شرائط پر

مسافت مختصر ہوگی یا اس کو طول دینا ہے

وہ حتمی فیصلہ کر کے

فقط ہر فیصلے کے ساتھ لفظِ کُن لگاتا ہے

کسی کو روک لیتا ہے کسے ہر دم بھگاتا ہے

فلک پر بیٹھ کر ماجد ہمیشہ حظ اٹھاتا ہے

بشر کو آزماتا ہے۔بشر کو آزماتا ہے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(275) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Bashar Ko Azmata Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.