Besabab Halat Ka Matam Kiya

بے سبب حالات کا ماتم کیا

بے سبب حالات کا ماتم کیا

جانے کس کس بات کا ماتم کیا

اک دیے سے چھٹ گئیں تاریکیاں

روشنی نے رات کاماتم کیا

خود سے بھی آنکھیں چرا کر چل پڑا

روزو شب اوقات کا ماتم کیا

فکرو فاقہ نے گھٹایا قد مرا

اور اپنی ذات کا ماتم کیا

کیوں اذیت بڑھ رہی ہے ناصحا

رنج تھا جذبات کاماتم کیا

زندگی جب مرگ میں لپٹی ملی

ان گنت صدمات کاماتم کیا

اس کے لہجے سے عیاں تھی دشمنی

اس لیے بد ذات کا ماتم کیا

کر بلا کا واقعہ یاد آگیا

اشک تھے سادات کا ماتم کیا

جب مری برداشت ماجد چیخ اٹھی

تب کہیں آفات کا ماتم کیا

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(366) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Besabab Halat Ka Matam Kiya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.