Hai Rasta Dushwar Kayi Bar Hua Hai

ہے راستہ دشوار کئی بار ہوا ہے

ہے راستہ دشوار کئی بار ہوا ہے

ہاں عشق یہ آزار کئی بار ہوا ہے

شامل ہوئے ہیں قافلے میں جعفر و صادق

یہ سانحہ اس پار کئی بار ہوا ہے

حلقوں سے عیاں ہو رہا ہے شب کا فسانہ

تو نیند سے بیدار کئی بار ہوا ہے

سن حق کے قبیلے سے تعلق ہے پرانا

منصور سرِ دار کئی بار ہوا ہے

سب جانتا ہے میرا خدا خاک کا پیکر

بے یارو مدد گار کئی بار ہوا ہے

آتجھ کو دکھا دوں میں محبت کی نشانی

دل تیرا طلب گار کئی بار ہوا ہے

ہے زیر عتاب آج مرے دیس کے اندر

جو صاحبِ دستار کئی بار ہوا ہے

رب جانتا ہے موت سے ہے زیست بھیانک

وا مجھ پہ کئی بار کئی بار ہوا ہے

ماجد کے قلم پر ہے خدا کی یہ عنایت

قرطاس پہ تلوار کئی بار ہوا ہے

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(302) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Hai Rasta Dushwar Kayi Bar Hua Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.