Jism Ka Rooh Se Rabta Khatam Shud

جسم کا روح سے رابطہ ختم شد

جسم کا روح سے رابطہ ختم شد

آگے دیوار ہے راستہ ختم شد

ہجر یادوں کی کب تک اسیری بنے

کیجیے درد کا سلسلہ ختم شد

کون کیسے مَرا ہم کو مطلب ہے کیا

آو گھر کو چلیں حادثہ ختم شد

کیسے پل بھر میں رب سے ملاقی ہوئے

ایسے نکتے پہ ہےفلسفہ ختم شد

عشق اور جنگ میں کوئی حد ہے کہاں

میں نہیں مانتا ضابطہ ختم شد

سر جھکایا گیا اُس کے دربار میں

جو مجازی کا تھا مسئلہ ختم شد

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(320) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Jism Ka Rooh Se Rabta Khatam Shud in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.