Main Kaise Dees Main Paida Hua HooN

میں کیسےدیس میں پیدا ہوا ہوں

میں ایسے دیس میں پیدا ہوا ہوں

جہاں ہر دوسرا ہی فلسفی ہے

نشانے پر ہمیشہ زندگی ہے

جہاں پر نکتہ چینی مشغلہ ہے

جہاں پر فتوی گھڑنا حادثہ ہے

فقط تعویز ہی ردِ بلا ہے

جہاں ہر فرد کا اللہ سے بڑھ کرمولوی سے رابطہ ہے

جہالت کا انوکھا سلسلہ ہے

خود اب اندازہ کر لو دین اُس کا کیا سے کیا ہے

میں ایسے دیس میں پیدا ہوا ہوں

جہاں ذہنی اپاہج گھومتے ہیں

خردسے دور ہیں پر سوچتے ہیں

جہاں اندھے عموًما دیکھتے ہیں

بنا جانے حقائق بولتے ہیں

درندے بنتِ حوّا نوچتے ہیں

میں ایسے دیس میں پیدا ہوا ہوں

جہاں دانش وری بھی شعبدہ ہے

جہاں پر تیرگی بےانتہا ہے

جہاں حساس ہونا بھی سزا ہے

جہاں ہر روز ہی محشر بپاہے

میں ایسے دیس میں پیدا ہوا ہوں

جہاں پر خامشی میں زندگی ہے

دکھاوے کی جہاں پر بندگی ہے

جہاں پر خون میں لتھڑی صدی ہے

مسالک میں بٹی سب کی خودی ہے

میں ایسے دیس میں پیدا ہوا ہوں

حقائق جان کر شرما گیا ہوں

یہ کیسی دوڑ ہے گھبرا گیا ہوں

کہاں جانا تھا مجھ کو اور کہاں پر آگیا ہوں

سوالوں کے کٹہرے میں کھڑا ہوں

نجانے خود سے کیا کچھ پوچھتا ہوں

میں کیسےدیس میں پیدا ہوا ہوں

میں کیسےدیس میں پیدا ہوا ہوں

ماجد جہانگیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(454) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majid Jahangir, Main Kaise Dees Main Paida Hua HooN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 54 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majid Jahangir.